Awwaaz-Pakistan

آواز پاکستان ایک ایسی ویب سایٹ ہے جہاں آپ کرپشن، ناانصافی اور طاقت کا ناجاۂز استعمال، وڈیو، آڈیو اور تصویر کی شکل میں شاۂع کر سکتے ہیں۔

Awwaaz Pakistan is a website for you to post incidents of corruption, nepotism, misuse of government authority in video, audio and image formats.

The Weekly

LATEST NEWS

* If requested we will refer your experience to the concerned authorities for action and follow-up... * NAB requests for placing Sharif family's names on ECL......Rangers, FC contingents mount in Red Zone as IHC's deadline to protesters expires.... ... * CJP dismisses Nawaz Sharif's appeal on multiple references petition.....SC forms bench to probe Pakistanis involved in Panama scandal.... ... * NA passes amendment regarding delimitation of constituencies.....NAB to reinvestigate Ishaq Dar in Hudaibiya Paper Mills case... ... * Accountability court declares Hassan, Hussain Nawaz absconders in NAB references....NAB to send another team to Britain for gaining record against Sharif family..... ... * SC reserves verdict on Imran Khan, Jahangir Tareen disqualification cases........ Justice Khosa recuses himself from SC bench hearing Hudabiya case...... ... * Nawaz Sharif tried to fool people, says SC in Panama review order..... ...
Press ESC or click HERE to close the video


لندن فلیٹس کب خریدے گئے؟پیسہ کب؟کہاں سے کیسے باہر گیا؟سب پتہ چل گیا۔

http://www.awwaaz.com/images/stories/لندن فلیٹس کب خریدے گئے؟پیسہ کب؟کہاں سے کیسے باہر گیا؟سب پتہ چل گیا۔
Share on :
Description

اسلام آباد: شریف فیملی نے لندن فلیٹس مبینہ طور پر 1993میں خریدے ۔نجی ٹی وی کے ایک مشہور اینکرنے تمام تفصیلات بے نقاب کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ مبینہ طور پر یہ فلیٹس اس پیسے سے خریدے گئے تھے جو شریف فیملی کے دستِ راست جاوید کیانی کے ذریعہ سے ٣ جعلی اکائونٹس میں مختلف ذرائع سے جمع کروایا گیا تھا۔ مزید تفصیلات کے مطابق نوے کی دہائی میں ہونے والی سرکاری تحقیقات سے یہ ہوش ربا حقیققت سامنے آئی ہے کہ جاوید کیانی نے حبیب بینک اے جی زیورچ کی لاھور برانچ میں تین جعلی اکائونٹ محمد رمضان، سلمان ضیا اور اصغر علی کے نام سے کھلوائے اور وہی انہیں آپریٹ کرتا رہا۔اس رپورٹ کے مطابق ان تینوں اکائونٹس میں لاکھوں ڈالرز ٹرانسفر کروائے گئے تھے۔مزید تفصیلات کے مطابق سلمان ضیا کے اکائونٹ میں 3429700 ڈالر ،محمد رمضان کے اکائونٹ میں 15,62477جبکہ اصغر علی کے اکائونٹ میں 15,12477 ڈالرز جمع ہوئے جنہیں بعد ازاں مبینہ طور پر قاضی فیملی کے اکائونٹ کے ذریعہ سے لندن کے بنک میں ٹرانسفر کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق لندن کا یہ اکائونٹ اور دیگر مالی معاملات شریف فیملی کے فرنٹ مین ارس سپیکر دیکھتے تھے جو سوئس نژاد ہیں اور مبینہ طور پر نواز شریف کی آف شور فرم شمروک کے معاملات بھی انہی کے سپرد تھے اور دستاویزات اور متعلقہ منی ٹریل سے پتہ چلا ہے کہ لندن فلیٹس ١٩٩٣ میں اسی رقم سے خریدے گئے تھے جو ان تین جعلی اکائونٹس کے ذریعہ سے منتقل کی گئی۔رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ شریف فیملی کی ایک اورآف شور کمپنی چانڈرن جرسی اورشمروک کا ذکر ورلڈ بنک کی ویب سائٹ برائےسٹولن ایسٹس ریکوری انیشی ایٹو سے بھی مل سکتا ہے جہاں پر بتایا گیا ہے مذکورہ کمپنی چوہدری شوگر ملز کی ملکیت ہے۔

Add Comment تبصرہ شامل کریں
Comments تبصرے
  • Nisha Noor says :

    2016-05-30 01:09:32

    Money trail to digg millions of bucks..sounds amazing the way these guys bagged money and all..Ahh Pakistan!!


Visitors Count

Visitors





OR یا

          OR یا





            -Please provide your email or phone number for verification of your upload, Your information will be kept confidential اپلوڈ کی تصدیق کے لیے اپنا ای میل یا فون نمبرفراحم کریں،آپ کی معلومات کو خفیہ رکھا جاۓ گا۔